معرفت الہیہ

تعارف کتاب:

اس کتاب کا تعارف
زیرنظر کتاب ’’معرفت الٰہیہ‘‘حکیم الامت حضرت مولانا اشرف علی صاحب تھانوی رحمۃ اللہ علیہ کے اجل خلیفہ حضرت مولانا شاہ عبدالغنی صاحب پھولپوری رحمۃ اللہ علیہ کے علم و فقہ اور اعلیٰ روحانی مرتبے کی غماز ہے۔ آپ کے ان غامض علوم کو آپ کے شاگردِ رشید اور مرید حضرت مولانا حکیم محمد اختر صاحب نے جس احسن طریقے سے اس کتاب میں قلم بند فرمایا ایک زمانہ اس کا معترف ہوا۔ آپ کے یہ الہامی علوم آپ کی مختلف مجالس کے ارشادات و تقاریر کا مجموعہ ہے۔ ان علوم و ارشادات میں سے بعض درسِ بخاری شریف کے وقت میں ہوئے، بعض جلسہ و خطابِ عام میں وارد ہوئے، بعض احبابِ خصوصی کی مجلس میں بصورتِ ملفوظات ظاہر ہوئے، بعض درسِ مثنوی مولائے روم کے دوران ارشاد فرمائے اور بعض علوم و معارف اس وقت کےہیں جب حضرت پھولپوری رحمۃ اللہ علیہ تلاوت و ذکر میں مشغول ہوتے تھے اور اچانک ارشاد فرماتے کہ فلاں آیت یا حدیث کے متعلق حق تعالیٰ نے مجھے علمِ عظیم عطا فرمایا ہے، پھر اس علم کی تقریر فرماتے جسے آپ کے ہمہ وقت حاضر باش مرید و شاگرد حضرت مولانا حکیم محمد اختر صاحب لکھ لیا کرتے تھے۔ یوں سولہ برس تک قطرہ قطرہ جمع ہوتا گیا اور علوم و معارف کا یہ عظیم الشان سمندر معرض وجود میں آیا۔ جس کے متعلق حضرت مولانا عبد الغنی صاحب فرماتے تھے کہ ’’یہ نعمتِ علم ایسی نعمت ہے کہ ہفت اقلیم کی دولت اس کے سامنے ہیچ ہے۔‘‘
مزید ۔۔۔

10 نمایاں اراکین

مزید ۔۔۔

نومبر کے نمایاں اراکین

    ٹائپنگ اعداد وشمار

    • آج ٹائپ کردہ صفحات :0
    • آج تصحیح شدہ صفحات :0
    • اس ہفتہ ٹائپ کردہ :0
    • اس ہفتہ تصحیح شدہ :0
    • اس ماہ ٹائپ کردہ:0
    • اس ماہ تصحیح شدہ:0
    • کل ٹائپ کردہ صفحات :18262
    کتابوں کے جملہ حقوق بحق ناشرین ومصنفین محفوظ ہیں۔ ہمارا مقصد صرف سہولت تحقیق وتلاش ہے، لہذا مکتبہ کا مالی فائدہ کے لئے استعمال ممنوع ہے،
    آپ مستند دینی کتابیں ہمیں ارسال فرماکر مکتبہ کے کام میں تعاون کرسکتے ہیں۔ جزاکم اللہ خیرا

    علم دین | 2006 - 2016