نصف النہار شرعی سے پہلے روزے کی نیت کرنا چاہئے

س… کیا نصف النہار شرعی کے وقت روزے کی نیت کرسکتے ہیں اور نماز پڑھ سکتے ہیں؟

ج… پہلے یہ سمجھ لیا جائے کہ “نصف النہار شرعی” کیا چیز ہے؟ نصف النہار دن کے نصف کو کہتے ہیں، اور روزہ دار کے لئے صبحِ صادق سے دن شروع ہوجاتا ہے، پس صبحِ صادق سے لے کر غروبِ آفتاب تک پورا دن ہوا، اس کے نصف کو “نصف النہار شرعی” کہا جاتا ہے۔ اور سورج نکلنے سے لے کر غروب ہونے تک کو عرفاً “دن” کہتے ہیں۔ اس کا نصف “نصف النہار عرفی” کہلاتا ہے۔ “نصف النہار شرعی”، “نصف النہار عرفی” سے کم و بیش چالیس منٹ پہلے ہوتا ہے۔

جب یہ معلوم ہوا تو اب سمجھنا چاہئے کہ روزے کی نیت میں “نصف النہار شرعی” کا اعتبار ہے، اس لئے روزہٴ رمضان اور روزہٴ نفل کی نیت “نصف النہار شرعی” سے پہلے کرلینا صحیح ہے (جبکہ کچھ کھایا پیا نہ ہو)، اس کے بعد صحیح نہیں، اور نماز میں “نصف النہار عرفی” کا اعتبار ہے، کہ اس وقت نماز جائز نہیں۔ “نصف النہار شرعی” (جس کو “ضحوہٴ کبریٰ” بھی کہتے ہیں) کے وقت نماز دُرست ہے۔