۲۳؍۱۲؍۱۳۹۶ھ
(۱) کتاب الزکوٰۃ ، باب صدقۃ الفطر ، ج:۲،ص:۳۶۴(طبع سعید کراچی ) نیز دیکھئے:کفایت المفتی ،ج:۴،ص:۳۱۲۔(جدید ایڈیشن،دارالاشاعت)
(۲) وفی تنویر الابصار (طبع جدید) ج:۲،ص:۳۶۴، نصف صاع من بر أو دقیقہ او سویقہ أو زبیب وکذا فی الھندیۃ ، ج:۱،ص:۱۹۱۔
زکوٰۃ اور فطرہ میں فرق
سوال :۔زکوٰۃ مقبولہ اور صدقہ فطر میں کیا فرق ہے ؟
جواب :۔ زکوٰۃ سالانہ مالی فریضہ ہے اور صدقۃ الفطرخاص عید کے دن کا فریضہ ہے ۔
واللہ اعلم
۱۸؍۹؍۱۳۹۹ھ
صدقہ فطر کی مقدار
سوال:۔ ’’حیات الاسلام‘‘ نے صدقہ فطر فی کس دو روپیہ اعلان کیا ہے صحیح رقم کیا ہوتی ہے ؟
جواب :۔ اصل میں فطرہ پونے دو سیر گندم یا اس کی قیمت ہے ، اس سال (۱۳۹۷ھ؁ میں ) پونے تین روپے تھی ۔
واللہ اعلم