الفجر فقط کما فی الا شباہ عن الغایہ ویؤیدہ ما فی شرح المنیۃ وقیل فی سائر الجھریۃ وقیل فی کل الصلوٰت وصرح الشرنبلالی انہ بعد الرکوع وھوالاظھر واستظھر الحموی انہ قبلہ۔قالوا ان المقتدی یتابع امامہ الا اذاجھر فیؤمن ولم یصر حوا بوضع الیدین وبالارسال لکن الا صل یرجح الوضع وھوان الوضع سنۃ قیام لہ قرار فیہ ذکر مسنون فی ظاہر المذھب…(بقیہ حاشیہ اگلے صفحہ پر)
العلماء الا رسال رفعاً للاشتباہ فلیرا جع الیٰ بوادر النوادر{۱} وھوا لموفق
قنوت نازلہ فی الفجرکامسئلہ
سوال: مایقول العلماء فی القنوت فی الفجر بعد الرکوع فی الرکعۃالثانیہ۔أمختص بالفجر ام لا؟وما کیفیتہ وطریقتہ؟بینواتوجروا
المستفتی:محمد حامد حقانی المتعلم بجامعۃ الحقانیہ اکوڑہ خٹک …۱۴۰۳ھ
الجواب: اعلم ان مسٔلہ القنوت النازلۃ فی الفجر طویلۃ الذیل لاھمۃ لنا لاستقصاء ھا فلنکتف بقول واحد من اقوال الفقھاء۔وھو انہ مختص بالفجر کما فی الشامیہ ص۴۷۱جلد۱عن الاشباہ عن الغابۃ وشرح المنیۃ۔وصرح الشر نبلالی انہ بعد الرکوع۔والمقتدی یتابع امامہ الا اذاجھرالامام فیؤمن المقتدی{۲}(ردالمختار)ولم یصر حوابوضع الیدین والارسال۔والقواعد تقتضی الوضع عندابی حنیفۃ لکونہ ذکراً طویلا۔والارسال عند صاحبیہ لعدم قراء ۃ القرآن{۳}وھو الموفق
(بقیہ حاشیہ) وسنۃ قراء ۃ فی روایۃ عن محمد۔واختار بعض الاکابر قول محمد رفعا للاشتباہ وصونا عن تکرارالرکوع۔(منھاج النسن شرح جامع السنن للترمذی ص۲۷۹جلد۲باب ماجاء فی القنوت فی صلوٰۃالفجر)
{۱}(بوادرالنوادرص۴۷۳نوے واں نادرہ تحقیق ارسال یاوضع یدین درقنوت نازلہ)
{۲}(ردالمحتارہامش الدرالمختار ص۴۹۶جلد۱:مطلب فی القنوت للنازلۃ)
{۳}وفی المنہاج السنن :قالوا ان المقتدی یتابع امامہ الا اذا جھر فیؤمن ولم یصر حوا بوضع الیدین وبالارسال لکن الاصل یرجح الوضع ھو ان الوضع سنۃ قیام لہ قرار فیہ ذکر مسنون فی ظاہر المذہب وسنۃ قراء فی روایۃ عن محمد، واختار بعض الاکابر قول محمد رفعاً للاشتباہ وصونا عن تکرار الرکوع۔
(منھاج السنن ص۲۷۹جلد۲ باب ما جاء فی القنوت فی صلاۃ الفجر)
قنوت نازلہ نماز فجرکی رکعت ثانیہ کے رکوع کے بعد پڑھی جائیگی
سوال :کیا فرماتے ہیں علماء دین اس مسٔلہ کے بارے میں کہ نماز فجرکی دوسری رکعت میںبعد الرکوع قنو ت نازلہ پڑھی جائیگی یا قبل الرکوع؟ اور کیاصرف فجر کی نماز میں پڑھی جائیگی؟بینواتوجروا
المستفتی:مولانا حسین احمد عباسیہ لکی مروت ۲۰صفر المظفر ۱۴۰۲ھ
الجواب: مفتیٰ بہ قول کی بنا پر قنوت نازلہ صرف فجر کی فرض نماز میں دوسری رکعت کے رکوع کے بعد پڑھی جائیگی۔لمافی ردالمحتار ص۶۲۸جلد۱