١ لانھالاتستقر مع جریان المائ، ٢ والاثر:ھوالطعم، اوالرائحة،اواللون، ٣ والجاری ما لا یتکرر استعمالہ٤ وقیل ما یذھب بتبنة (٤٦) والغدیرالعظیم الذی لایتحرک احد طرفیہ بتحریک الطرف

آئے۔
ترجمہ: ١ اس لئے کہ ناپاکی پانی بہنے کی وجہ سے ٹھہرے گی نہیں۔
تشریح:۔ نجاست کا اثر نظر نہ آنے کا مطلب یہ ہے کہ نجاست کی وجہ سے پانی کا رنگ یا بو یا مزا میں سے ایک بدل جائے تو جاری پانی ہونے کے باوجود اس سے وضو یا غسل کرنا جائز نہیں ہوگا۔لیکن اگر ناپاکی گری لیکن پانی کا مزا یا بو یا رنگ ناپاکی گرنے کی وجہ سے نہیں بدلا تو اس پانی سے وضو یا غسل کرنا جائز ہے۔ وہ پانی ابھی تک پاک ہے۔
وجہ : (١) اس لئے کہ جیسے ہی ناپاکی گری تو اس کو جاری پانی بہا کر دوسری جگہ لے گیا وہاں ٹھہرنے نہیں دیا۔ اس لئے اس جگہ کا پانی پاک رہا(٢) حدیث میں ہے کہ ماء کثیر کا جب تک رنگ، بو اور مزا نہ بدلے پاک ہے عن ابی امامہ الباھلی قال قال رسول اللہ ۖ ان الماء لاینجسہ شیء الا ماغلب علی ریحہ وطعمہ ولونہ۔(ابن ماجہ شریف، باب الحیاض ،ص٧٤،نمبر ٥٢١ طحاوی،باب الماء تقع فیہ النجاسة ص ١٥) مسئلہ نمبر ٣٧ پر حدیث قلتین گزری اس سے بھی معلوم ہوتا ہے کہ ماء کثیر میں ناپاکی گرنے سے ناپاک نہیں ہوگا جب تک کہ اوصاف ثلاثہ میں سے ایک نہ بدل جائے۔
ترجمہ: ٢ اور اثر وہ مزہ ،اور بو ،اور رنگ ہیں ۔یعنی ناپاکی کی وجہ سے ان میں سے کوئی ایک بدل جائے تو پانی ناپاک شمار کیا جائے گا ۔یہی نجاست کا اثر ہے ۔اوپر کی حدیث میں گزر گیا الا ماغلب علی ریحہ وطعمہ ولونہ۔(ابن ماجہ شریف، باب الحیاض ،ص٧٤،نمبر ٥٢١ )اس سے معلوم ہوا کہ پانی کے اوصاف ثلاثہ ( رنگ ، بو، مزہ) میں سے کسی ایک پر نجاست کا کوئی اثر ظاہر ہوجائے تو پانی ناپاک ہو جائیگا ۔
ترجمہ: ٣ اور جاری پانی اسکو کہتے ہیں کہ اسکا استعمال مکرر نہ ہو ۔پانی ہلکا ہلکا بہہ رہا ہے اس سے ایک چلو پانی لیا اب دوسرا چلو پانی لینے لگا تو وہی پانی دوبارہ ہاتھ میں نہیں آیا بلکہ وہ پانی بہہ کر آگے چلا گیا اور دوسراپانی ہاتھ میں آیا تو ایک ہی پانی ہاتھ میں مکرر نہیں آیا تو اسکو ماء جاری کہیں گے ۔اور اگر پانی اتنا سست بہہ رہا ہے کہ دوسرے چلو میں بھی پہلے والا ہی پانی آگیا تو یہ ماء جاری نہیں ہے ۔
ترجمہ: ٤ اور بعض لوگوں نے کہا کہ جو پانی تنکا بہا کر لے جائے ،وہ ماء جاری ہے۔
لغت : الماء الجاری : بہتا پانی، جو پانی تنکہ بہا کر لے جائے ،چلو سے پانی لے تو فورا دوسرا پانی اس جگہ آجائے اس کو ماء جاری کہتے ہیں۔تستقر : ٹھہر تا ہو ،استقر سے مشتق۔ تبنة : تنکا ، خشک گھاس ۔
ترجمہ: (٤٦) ایسا بڑا تالاب جو نہیں متحرک ہوتا ہو اس کا ایک کنارہ دوسرے کنارے کے حرکت دینے سے۔ اگر اس کے ایک