اجمالی فہرست (نجم الفتاوی جلد خامس)

فصل فی أحکام الولیمۃوالعروس۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۲۷
باب فی الأولیاء۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۴۵
فصل فی خیار البلوغ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۱۰۵
فصل فی استئذان المرأۃ قبل النکاح۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۱۱۹
باب فی الوکالۃ بالنکاح ونکاح الفضولی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۱۴۲
باب فی الکفاءۃ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۱۵۶
باب فی المھر۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۲۴۳
فصل فی الجھاز وغیرہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۳۴۲
باب فی النفقات ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۳۶۹
فصل فی حقوق الزوجین والعدل بین الأزواج ۔۔۔۔۔۴۳۶
فصل فی المتفرقات۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۴۹۶
کتاب الرضاع۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۵۶۱
فصل فی أحکام الولیمۃوالعروس( ولیمہ اور بارات کا بیان)
(۴۲۲) ولیمہ کس دن مسنون ہے؟
سؤال
کیا فرماتے ہیںعلماءِ کرام و مفتیانِ عظام اس مسئلہ کے بارے میں کہ ولیمہ زفاف کے بعداوّل دن میں مسنو ن ہے اور دوسرے اور تیسرے دن مستحب ہے یا تینوں دنوں میں کسی بھی دن اداء کیا جائے مسنون ہی ادا ہوگا؟
الجواب بعون الملک الوھاب
ولیمہ مسنون عمل ہے رخصتی کے بعد پہلے، دوسرے یا تیسرے میں سے کسی بھی دن ولیمہ کرنا مسنون ہے۔ اگر علاقے والوں کا عرف ایک ہی بار میں شرکاء کو کھلانے کا ہے تو تین دنوں میں سے کسی بھی دن یہ تقریب منعقد کی جاسکتی ہے اور اگر عرف متفرق طو ر پربایں معنی کہ جو آتا جائے اس کے لئے انتظام کردیا جاتا ہو جیسا کہ بہت سے علاقوں میں رواج ہے تو اس طرح تین دنوں تک مسلسل بھی ولیمہ کیا جاسکتا ہے بشرطیکہ ریاکاری اور اسراف نہ ہو۔