صابن بذاتِ خود پاک چیز ہے اور نظافت کے لئے اس کا استعمال جائز ہے اسلئے مذکورہ صورت میں صابن لگاکر باقی رکھنا اور پھر اس کے ساتھ نماز پڑھنا درست ہے۔
قال القدوریؒ:ویجوزالطھارۃبمائٍ خالطہ شی ء طاھرفغیراحمد اوصافہ کماء المد والماء الّذی اختلط بہ الزعفران والصابون۔۔۔۔۔الخ(مختصر القدوری:ص؍۹،کتاب الطھارۃ)
قال ابراھیم الحلبیؒ:وتجوزالطھارۃ بمائٍ خالطہ شئی طاھر فغیر احمد اوصافہ کماء المداوالماء الذی یختلط بہ الاُشنان والصابون اوالزعفران۔۔۔۔۔الخ۔(کبیری،باب مایجوز بہ الطھارۃ،ص؍۹۰)(فتاویٰ حقانیہ :ج؍۲،ص؍۵۱۶)
کیا سگریٹ اور نسوار سے وضو ٹوٹ جاتا ہے
سوال:۔ کیا سگریٹ اور نسوار کے استعمال سے وضو پر کوئی اثر پڑتا ہے؟
الجواب
دیگر نواقض کے علاوہ وضو ہر اس چیز سے بھی ٹوٹ جاتا ہے جس میں نشہ ہو، اور چونکہ نسوار اور سگریٹ میں نشہ کی وہ کیفیت نہیں جس کا اعتبار فقہاء نے کیا ہے، لہذاان دونوں سے وضو نہیں ٹوٹتا، البتہ بدبو کے ازالہ کے لئے منہ ضرور دھونا چاہئے (یعنی کلی وغیرہ کرلینی چاہئے)۔
قال العلامۃ ابن عابدینؒ:فانہٗ لم یثبت اسکارہ ولا تفتیرہ ولا اضرارہ بل ثبت لہ منافع۔۔۔۔۔الخ(ردّالمحتار علی الدّرالمختار کتاب الاشربۃ:ج؍۶،ص؍۴۵۹)