باب آداب النکاح وشرائطہ
(نکاح کے آداب وشرائط )
خطبہ نکاح سے پہلے پڑھنا چاہیے
سوالـ:۔بعض علاقوں میں یہ بات دیکھنے میں آئی ہے کہ نکاح (ایجاب وقبول )کے بعد خطبہ پڑھا جاتا ہے ،کیا ایجاب وقبول سے پڑھنا چاہیے یا بعد میں؟
الجواب
نکاح باہمی رضامندی سے ایجاب وقبول کا نام ہے البتہ نکاح سے پہلے خطبہ پڑھنا ایک استحبابی عمل ہے اس لئے نکاح سے پہلے خطبہ پڑھا جائے بعد میں پڑھنا صحیح نہیں۔
قال الحصکفیؒ: ویندب اعلانہ وتقدیم خطبۃ۔ (الدرالمختار علٰی صدر ردالمحتار:ج؍۳،ص؍۸،کتاب النکاح)
قال ابن نجیم رحمہ اللّٰہ:وفی المجتبٰی یستحبّ ان یکون النکاح ظاھرًاوأن یکون قبلہ خطبۃ۔(البحرالرائق:ج؍۳،ص؍۸۱،کتاب النکاح)
ومثلہ فی الفقہ الاسلامی وأدلتُہٗ:ج؍۷،ص؍۱۲۲،المبحث الخامس،مندوبات عقد النکاح)
(فتوی حقانیہ :ج؍۴،ص؍۲۹۳)
لفظ ’’نکاح‘‘کے بجائے ’’بیع‘‘کا لفظ کہنے سے نکاح کا حکم
سوال:۔اگر نکاح کے وقت لفظ کے بجائے بیچنے وغیرہ کے لفظ کہہ دیا جائے تو ان الفاظ سے نکاح منعقد ہوجاتا ہے یا نہیں؟