(شامي ۱؍۳۸۵ کراچی، شامي ۲؍۵۰ زکریا) فقط واللہ تعالیٰ اعلم
کتبہ: احقر محمد سلمان منصورپوری غفرلہ ۲؍۷؍۱۴۲۱ھ
الجواب صحیح: شبیر احمد عفا اللہ عنہ
جوتے پہن کر اذان دینا؟
سوال(۹۰):- کیا فرماتے ہیں علماء دین ومفتیانِ شرع متین مسئلہ ذیل کے بارے میں کہ: کچی بغیر فرش والی مسجد ہے، مؤذن پاک جوتے پہن کر اذان کہہ سکتا ہے یا نہیں؟
باسمہٖ سبحانہ تعالیٰ
الجواب وباللّٰہ التوفیق: اگر زمین پاک ہو تو پاک جوتے پہن کر اذان دینے میں مضائقہ نہیں ہے۔
مستفاد: وینبغي لداخلہ تعاہد نعلہ وخفہ، وصلاتہ فیہما أفضل أي في النعل والخف الطاہرین أفضل مخالفۃ الیہود، وفي الحدیث: صلوا في نعالکم ولا تشتبہوا بالیہود۔ (شامي ۲؍۴۲۹ زکریا، مستفاد حاشیۃ: فتاویٰ دار العلوم دیوبند ۲؍۱۲۱) فقط واللہ تعالیٰ اعلم
کتبہ: احقر محمد سلمان منصورپوری غفرلہ ۳۰؍۸؍۱۴۱۳ھ
الجواب صحیح: شبیر احمد عفا اللہ عنہ
ختم سحری کے فوراً بعد اذان دینا ؟
سوال(۹۱):- کیا فرماتے ہیں علماء دین ومفتیانِ شرع متین مسئلہ ذیل کے بارے میں کہ:ختم سحری ہوتے ہی اذان پڑھنا اور اس اذان پر نماز پڑھنا شرعاً درست ہے یانہیں؟ جب کہ ہر نقشہ میں تحریر ہے کہ ختم سحری سے ۶؍منٹ کے بعد صبح صادق ہوگی؟
باسمہٖ سبحانہ تعالیٰ
الجواب وباللّٰہ التوفیق: اوقاتِ نماز کے نقشوں میں ختم سحر اور صبح صادق کا حقیقی وقت لکھا جاتا ہے اور اس کے بعد اذان دینے میں بطور احتیاط ۵-۶؍ منٹ کا وقفہ دیا جاتا ہے، اس لئے احتیاط کا تقاضہ یہی ہے کہ اس وقفہ کے گذرنے کے بعد ہی اذان فجر دی جائے، اس سے پہلے نہ دی جائے۔
عن أنس بن مالک رضي اللّٰہ تعالیٰ عنہ قال: أذن بلال قبل الفجر فأمرہ النبي صلی اللّٰہ تعالیٰ علیہ وآلہ وسلم أن یرجع۔ (مسند البزار ۱۳؍۲۰۲ رقم: ۶۶۶۷، سنن الدار قطني ۱؍۲۵۳ رقم: ۹۴۷)
فیعاد أذان وقع بعضہ قبلہ کالإقامۃ خلافا للثاني في الفجر۔ (درمختار ۲؍۵۰ زکریا)
أول وقت الفجر إذا طلع الفجر الثاني وہو المعترض في الأفق۔ (ہدایۃ ۱؍۸۰)
حتی لو أذن قبل دخول الوقت لا یجزیہ، ویعیدہ إذا دخل الوقت في الصلوات في قول أبي حنیفۃ ومحمد رحمہما اللّٰہ تعالیٰ۔ (بدائع الصنائع، الصلاۃ / بیان وقت الأذان والإقامۃ ۱؍۶۵۸ بیروت)
إذا أذن قبل الوقت یکرہ الأذان والإقامۃ۔ (الفتاویٰ التاتارخانیۃ ۲؍۱۴۸ رقم: ۱۹۹۴ زکریا) فقط واﷲ تعالی اعلم
کتبہ: احقر محمد سلمان منصور پوری غفر لہ۹؍ ۱۱؍ ۱۴۲۵ھ
الجواب صحیح: شبیر احمدعفا اﷲ عنہ
اذان میں آواز کی بلندی کے لئے "ECCO" لگانا؟
سوال(۹۲):- کیا فرماتے ہیں علماء دین ومفتیانِ شرع متین مسئلہ ذیل کے بارے میں کہ: مساجد میں اذان کے لئے لاؤڈ اسپیکر مائک میں ایک آلہ جس کو ’’ECCO‘‘ اکّوُ کہا جاتا