آنحضرتﷺ کا ایک مرتبہ کسی نے حلیہ پوچھا تو بولیں: ’’بس یہ سمجھ لو کہ آفتاب طلوع ہورہا ہے4۔‘‘
(۱۲)
حضرت اُمّ ہانیؓ


نام و نسب: فاختہ نام، اُمّ ہانی کنیت، ابو طالب عم۔ّ رسول اللہﷺ کی دختر تھیں، ماں کا نام فاطمہ بنت اسد تھا، اس بنا پر حضرت علی، حضرت جعفر طیا۔ّر اور اُمّ ہانی ؓ حقیقی بھائی بہن ہیں۔


نکاح: ہبیرہ بن عمرو بن عائذ مخزومی سے نکاح ہوا۔


اسلام: ۸ ہجری میں جب مکہ فتح ہوا، مسلمان ہوئیں، حضورﷺ نے اس روز ان کے مکان میں غسل کیا تھا اور چاشت کی نماز پڑھی۔ انہوں نے اپنے دو عزیزوں کو جو مشرک تھے پناہ دے دی تھی، آنحضرتﷺ نے بھی ان کو پناہ دی۔1 ان کا شوہر ہبیرہ فتحِ مکہ میں نجران بھاگ گیا تھا۔


وفات: ترمذی کی روایت ہے کہ حضرت علیؓ کی وفات کے بعد مد۔ّت تک زندہ رہیں۔ تہذیب میں ہے: امیر معاویہؓ کے زمانۂ خلافت میں انتقال کیا۔


اولاد: حسب ذیل اولاد چھوڑی: عمرو، ہانی، یوسف، جعدہؓ۔