۶؍۵۴۷ زکریا) فقط واللہ تعالیٰ اعلم
کتبہ: احقر محمد سلمان منصورپوری غفرلہ ۲۷؍۱۱؍۱۴۲۷ھ
الجواب صحیح: شبیر احمد عفا اللہ عنہ

مسجدِ شرعی
مسجد کا اطلاق کن کن حصوں پر ہوتا ہے؟
سوال(۱۴۳):- کیا فرماتے ہیں علماء دین ومفتیانِ شرع متین مسئلہ ذیل کے بارے میں کہ: مسجد کسے کہتے ہیں؟ اِحاطۂ مسجد کے مختلف حصوں کو الگ الگ ناموں سے موسوم کیا جاسکتا ہے یا نہیں؟ مثلاً جماعت خانہ، صحن مسجد، متعلقاتِ مسجد، خارجِ مسجد وغیرہ، اگر کیا جاسکتا ہے، تو احکامِ مسجد کے پیشِ نظر داخلِ مسجد کی حدود متعین کرنا وہاں کوئی علامت اسٹیکر کالی یا ہری پٹی کے ذریعہ نشان دہی کرنا کیسا ہے؟
باسمہٖ سبحانہ تعالیٰ
الجواب وباللّٰہ التوفیق: اَصلاً مسجد کے دو حصے ہوتے ہیں:
(۱) مسجدِ شرعی، جسے جماعت خانہ بھی کہا جاتا ہے اس سے مراد وہ پورا حصہ ہے، جہاں نماز باجماعت پڑھی جاتی ہے، جس میں اندورنی وبیرونی سب حصے شامل ہیں۔
(۲) ملحقاتِ مسجد، جسے متعلقاتِ مسجد یا خارجِ مسجد وغیرہ بھی کہا جاسکتا ہے، اس سے مراد وہ تمام مسجد کے ملحق حصے ہیں، جو جماعت خانہ اور مسجدِ شرعی سے الگ ہیں، جن میں وضو خانہ، اِمام ومؤذن کے کمرے چٹائی وغیرہ رکھنے کے اسٹور اور جماعت وغیرہ سب شامل ہیں، اور مسجدِ شرعی کے امتیاز کے لئے کوئی بھی علامت لگانا شرعاً منع نہیں ہے؛ بلکہ بہتر ہے؛ تاکہ