آخری حرف کی تبدیلی کے اعتبار سے کلمہ کی دو قسمیں ہیں: معرب اور مبنی۔
۱۔ معرب وہ کلمہ ہے جس کا آخر عامل کے بدلنے سے بدلتا رہے۔ جیسے: جَائَ زیدٌ، رَأَیْتُ زَیْدًا اور مَرَرْتُ بِزَیْدٍ میں زید معرب ہے۔
۲۔ مبنی وہ کلمہ ہے جس کا آخر عامل کے بدلنے سے نہ بدلے۔ جیسے: جَآء ہٰؤُلآئِ، رأیتُ ہٰؤلآئِ اور مررتُ بہٰؤُلآئِ میں ہٰؤُلآء مبنی ہے کیوں کہ وہ تینوں حالتوں میں یکساں رہتا ہے۔
فائدہ: اسمِ معرب کو اسمِ متمکن اور اسمِ مبنی کو اسمِ غیر متمکن بھی کہتے ہیں۔ اور اسمِ معرب کے تین اعراب ہیں: رفع، نصب اور جر۔ پس اسمِ معرب کی تین قسمیں ہیں: مرفوعات، منصوبات اور مجرورات۔
۱۔ مرفوعات یعنی وہ اسما جن کا اعراب رفع ہے آٹھ ہیں: فاعل، نائب فاعل (مَفْعُوْلٌ مَالَمْ یُسَمَّ فَاعِلُہٗ) مبتدا، خبر، حروفِ مشبہ بالفعل کی خبر، افعالِ ناقصہ کَانَ وغیرہ کا اسم، مَا ولَا مشابہ بہ لیس کا اسم اور لائے نفی جنس کی خبر۔
۲۔ منصوبات یعنی وہ اسما جن کا اعراب نصب ہے، بارہ ہیں: مفعول مطلق، مفعول بہ، مفعول لہ، مفعول معہ، مفعول فیہ، حال، تمیز، مستثنیٰ، حروف مشبہ بالفعل کا اسم، افعال ناقصہ کی خبر، ما ولا مشابہ بہ لیس کی خبر اور لائے نفی جنس کا اسم۔
۳۔ مجرورات یعنی وہ اسما جن کا اعراب جر ہے دو ہیں: مضاف الیہ اور مجرور بہ حرفِ جر۔
مبنیات یعنی وہ کلمات جن کا آخر ہمیشہ ایک حال پر رہتا ہے یہ ہیں:
۱۔ تمام حروف مبنی ہیں۔