وصال فرمایا ہے۔ (اسد الغابہ وغیرہ) فقط واللہ تعالیٰ اعلم
کتبہ: احقر محمد سلمان منصورپوری غفرلہ ۸؍۸؍۱۴۱۹ھ
الجواب صحیح: شبیر احمد عفا اللہ عنہ
’’مُعاذ‘‘ اور ’’مُعَوِّذْ ‘‘ دونوں حقیقی بھائی ہیں
سوال(۷۷):- کیا فرماتے ہیں علماء دین ومفتیانِ شرع متین مسئلہ ذیل کے بارے میں کہ: معاذ اور معوذ دونوں حقیقی بھائی ہیں یا نہیں؟ کیا چھوٹے بھائی نے بڑے بھائی کے کان میں کشتی لڑتے وقت کہا تھا کہ تم گر جانا؛ تاکہ میری جیت ہوجائے اور میں جنگ میں لے لیا جاؤں۔ مفصل مع حوالہ جواب دے کر تسکین قلب فرمائیں۔
باسمہٖ سبحانہ تعالیٰ
الجواب وباللّٰہ التوفیق: حضرت عفراء کے صاحب زادے معاذ اور معوذ دونوں حقیقی بھائی ہیں، دونوں غزوۂ بدر میں شریک تھے، اور ابو جہل پر پہلا وار کیا، ان دونوں کے ساتھ ایک اور معاذ نامی صحابی شریک تھے، جن کاپورا نام معاذ بن عمرو الجموح ہے۔
معوذ بن الحارث وعفرا أمہ شہد بدراً، وہو الذي قتل أبا جہل مع أخیہ معاذ ص۔ (الإکمال ۱۱۳)
فیحتمل أن یکون معاذ بن عفراء شداً علیہ مع معاذ بن عمرو کما في الصحیح وضربہ بعد ذلک معوذ حتی أثبتہ۔ (البدایۃ والنہایۃ بیروت ۳؍۳۰۶، سیرۃ المصطفی ۲؍۹۷)

ان دونوں بھائیوں کے کشتی لڑنے کا واقعہ احقر کو نہیں مل سکا۔ فقط واللہ تعالیٰ اعلم
کتبہ: احقر محمد سلمان منصورپوری غفرلہ
۴؍۴؍۱۴۱۲ھ
حضرت امیر معاویہ ص کو برا بھلا کہنے والا اہلِ سنت والجماعت سے خارج ہے
سوال(۷۸):- کیا فرماتے ہیں علماء دین ومفتیانِ شرع متین مسئلہ ذیل کے بارے