شرائطِ نماز
نماز صحیح ہونے کے لئے کتنی شرطیں ہیں؟
سوال(۱۶۴):- کیا فرماتے ہیں علماء دین ومفتیانِ شرع متین مسئلہ ذیل کے بارے میں کہ: نماز کے صحیح ہونے کے لئے کتنی شرطیں ہیں ؟
باسمہٖ سبحانہ تعالیٰ
الجواب وباللّٰہ التوفیق: نماز کی صحت کے لئے کل سات شرطیں ہیں: (یعنی جن کا نماز کے شروع کرنے سے پہلے اہتمام کرنا ضروری ہے)
(۱) حدثِ اکبر (جنابت) اورحدثِ اصغر سے پاک ہونا۔
{یٰٓاَیُّہَا الَّذِیْنَ اٰمَنُوْا اِذَا قُمْتُمْ اِلَی الصَّلَاۃِ فَاغْسِلُوْا وُجُوْہَکُمْ وَاَیْدِیَکُمْ اِلَی الْمَرَافِقِ وَامْسَحُوْا بِرُئُوْسِکُمْ وَاَرْجُلَکُمْ اِلَی الْکَعْبَیْنِ} [المائدۃ جزء آیت: ۶]
{وَاِنْ کُنْتُمْ جُنُبًا فَاطََّّہَرُوْا} [المائدۃ جزء آیت: ۶]
عن أبي ہریرۃ رضي اللّٰہ عنہ یقول: قال رسول اللّٰہ صلی اللّٰہ علیہ وسلم: لا تقبل صلاۃ من أحدث حتی یتوضأ۔ (صحیح البخاري، الوضوء / باب لا تقبل صلاۃ بغیر طہور ۱؍۲۵ رقم: ۱۳۵، سنن الترمذي، الطہارۃ / باب لا تقبل الصلاۃ بغیر طہور ۱؍۳ رقم: ۱)
(۲) نمازی کے بدن، کپڑے اور جگہ کا پاک ہونا۔
قال تعالیٰ: {وَثِیَابَکَ فَطَہِّرْ} [المدثر: ۴]
قال تعالیٰ: {وَعَہِدْنَا اِلٰی اِبْرَاہِیْمَ وَاِسْمَاعِیْلَ اَنْ طَہِّرَا بَیْتِیَ لِلطَّآئِفِیْنَ وَالْعَاکِفِیْنَ وَالرُّکَّعِ السُّجُوْدِ} [البقرۃ: ۱۲۵]