ایک صحابی رضی اللہ عنہ نے سانپ کے کاٹے ہوئے پر دَم کیا۔
اللہ کے حکم سے وہ اچھا ہوگیا۔
(صحیح مسلم، کتاب الطب، باب جواز اخذ الاجرۃ علی الرقیۃ بالقرآن والاذکار، رقم : ۲۲۰۱)
حدیث نمبر 3:
فَاتِحَۃُ الْکِتَابِ شِفَائٌ مِّنْ کُلِّ دَآئٍ۔ (سنن الدارمی : 445/2)
سورۂ فاتحہ میں ہر بیماری سے شفا ہے۔
حدیث نمبر 4:
اِذَا قَرَأْتَ الْفَاتِحَۃَ وَقُلْ ہُوَ اللہُ اَحَدْ فَقَدْ اَمِنْتَ
مِنْ کُلِّ شَیْ ئٍ اِلَّا الْمَوْتُ
اور جب تم نے سورۂ فاتحہ اور قل ہو اللہ احد پڑھ لیا تو سوائے موت کے ہر آفت سے مامون ہوگئے۔ (مجمع الزوائد 122/10)
بدن کی سلامتی کی دعا
اَللّٰہُمَّ عَافِنِیْ فِیْ بَدَنِیْ، اَللّٰہُمَّ عَافِنِیْ فِیْ سَمْعِیْ، اَللّٰہُمَّ عَافِنِیْ فِیْ بَصَرِیْ، لَآ اِلٰہَ اِلَّا اَنْتَ
(ابوداود : ۵۰۹۰، عن ابی بکرہ رضی اللہ عنہ )
ترجمہ: اے اللہ! میرے بدن کو درست رکھیے، اے اللہ! میرے کان عافیت سے رکھیے،