احباب کودے اور ایک حصہ غرباء فقراء پرتقسیم کرے۔
یہ اللہ تعالیٰ کا اس امت کے ساتھ کتنا زبردست اکرام کا معاملہ ہے۔
قربانی سنت ابراہیمی
ایک موقع پرصحابہ نے اللہ کے حبیب ﷺسے پوچھا
مَاہٰذِہِ الْاَضَاحِیْ یَارَسُوْلَ اللّٰہِ؟
اللہ کے رسول!یہ قربانی کیا ہیں؟
آپ ؐ نے فرمایا سُنَّۃُ اَبِیْکُمْ اِبْرَاہِیْم
تمہارے باپ ابراہیم علیہ السلام کی سنت ہے۔
صحابہ نے پوچھا وَمَالَنَا فِیْہَا یَارَسُوْلَ اللّٰہِ؟
اللہ کے رسول !قربانی میں ہمیں کیا ملے گا؟
حضورؐ نے فرمایا بِکُلِّ شَعْرَۃٍ حَسَنَۃٌ
اس کے ہربال کے بدلہ میں ایک نیکی
صحابہ نے پوچھا وَمَاالصُّوْفُ یَارَسُوْلَ اللّٰہِ؟
جن جانوروں پراون ہیں اس میں کیا ملے گا؟
حضورؐ نے فرمایا بِکُلِّ شَعْرَۃٍ مِنَ الصُّوْفِ حَسَنَۃٌ
اون میںبھی ہربال کے بدلہ میں ایک نیکی ۔
جانور کے بدن پرکتنے بال ہوتے ہیں،اس کی کوئی گنتی نہیں ہوسکتی،جوجتنی قربانیاں اللہ کے حضورپیش کرے گا اسکی اتنی ہی فضیلت ہے۔
قربانی نہ کرنے پروعید