حرم کی مٹی اور پتھر کا حکم
حدودِ حرم کی مٹی اور پتھر وغیرہ کاحکم خود رو درخت اور گھاس کے مانند نہیں ہے؛ لہٰذا وہاں کی مٹی کو ضرورت کی وجہ سے کھودنا یا حرم سے باہر منتقل کرنے میں کوئی حرج نہیں ہے۔ ولا بأس باخراج الحجر والتراب من الحرم۔ (فتاویٰ سراجیۃ ۱۹۰، تاتارخانیۃ زکریا ۳؍۵۹۹)
حرم میں شکار کردہ جانور کی بیع باطل ہے
جس شخص نے احرام کی حالت میں شکار کیا ہے تو اس کا شکار کردہ جانور میتہ کے حکم میں ہے، اس کا استعمال اور خرید وفروخت سب حرام اور باطل ہے۔ لا یجوز بیع المحرم صیداً فی الحل والحرم۔ (مناسک علی قاری ۳۷۱، اللباب ۱۹۰)
