میں فلاں بن فلاں اس خط سے آپ کی بیٹی فلاں بنت فلاں کو تین طلاق دیتا ہوں ، یہ خط ملتے ہی لڑکی کو خبر کر دی جائے اور اس معاملہ کو جلد نمٹا دیا جائے اور جب میری ضرورت ہو بلا لیا جائے۔
اب یہ شخص واپس اپنی بیوی کو بلانا چاہتا ہے، خط لکھتے وقت کوئی گواہ یا وکیل نہیں تھا تو اس خط سے طلاق ہوئی یا نہیں ؟ اور یہ شخص اب اپنی بیوی کو دوبارہ اپنے نکاح میں لا سکتا ہے؟
الجواب: حامداً و مصلیاً و مسلماً… صورت مسئولہ میں عورت پر تین طلاق واقع ہو گئی، اب بغیر شرعی حلالہ کے دونوں کا میاں بیوی کی طرح رہنا درست نہیں ہے۔ (فتاویٰ عالمگیری، شامی:۲) طلاق کے صحیح ہونے کے لئے گواہ کا ہونا یا ان کی دستخط کا ہونا ضروری نہیں ہے۔
{۱۸۷۸} حالت حمل میں طلاق دینے سے طلاق ہو جاتی ہے؟
سوال: ایک حاملہ عورت کو اس کے شوہر نے طلاق دے دی، طلاق کے پانچ مہینہ بعد اسے بچہ پیدا ہوا تو کیا عورت کو طلاق ہو گئی؟
الجواب: حامداً و مصلیاً و مسلماً… حمل کی حالت میں طلاق دینا درست ہے، اس لئے حالت حمل میں طلاق دینے سے طلاق ہو جاتی ہے، اوربچہ کی ولادت ہوتے ہی عورت کی عدت ختم ہو جائے گی۔
{۱۸۷۹} بیوی کا طلاق سننا ضروری نہیں ہے؟
سوال: ہماری شریعت میں کوئی بھی شخص اپنی بیوی کو جب چاہے طلاق دے سکتا ہے لیکن طلاق دینے سے قبل تین مرتبہ عورت کو سمجھانا پڑتا ہے اگر کسی عورت کو حیض آنا بند ہو جائے یعنی وہ حاملہ ہو جائے تو اس حالت میں اسے طلاق دے سکتے ہیں ؟