دین کے تمام شعبوں کو زندہ کرنے اور پوری زندگی میں دین کو نافذ کرنے کی کوشش نہ کی گئی تو ایسی صورتحال کے متعلق حضرت مولانا محمد الیاس صاحبؒ ارشاد فرماتے ہیں :
’’میں سچ کہتا ہوں کہ ابھی تک اصلی کام شروع نہیں ہوا، جس دن کام شروع ہوجائیگا (یعنی زندگی کے تمام شعبوں میں پورا دین آجائے گا) تو مسلمان سات سو برس پہلے کی حالت کی طرف لوٹ جائیں گے۔
اور اگر کام شروع نہ ہوا بلکہ اسی طرح رہا جس طرح پر اب تک ہے اور لوگوں نے اس کو منجملہ تحریکات کے ایک تحریک سمجھ لیا ہے، اور کام کرنے والے اس میں بچل گئے (یعنی جمود کا شکارہوگئے اور اصل مقصد کو حاصل کرنے کی کوشش نہ کی) تو جو فتنے صدیوں میں آتے ہیں وہ مہینوں میں آجائیں گے اس لئے اسکو سمجھنے کی ضرورت ہے۔‘‘
(ملفوظات مولانامحمد الیاس صاحب ص ۴۳ ملفوظ ۳۸)
مقصدکی تکمیل کے لئے تبلیغی چھ نمبروں کی اہمیت حضرت مولانامحمد الیاس صاحبؒ کے نزدیک
ان مقاصد کی تکمیل کے لئے حضرت مولانا محمد الیاس صاحبؒ نے بہت غوروخوض او ر مشورہ کے بعد چھ نمبر تجویز کئے تھے جن کو حضرت مولانا محمد الیاس صاحبؒ اپنی جماعت تبلیغ کے اصول کادرجہ دیتے اور اصول سے تعبیر فرماتے تھے، جن کی اہمیت کا اندازہ آپ کو اس کتاب میں آئندہ اوراق کے ذریعہ ہوگا۔
واقعہ یہ ہے کہ ایمان و یقین اور ایثارو قربانی کے تعلق سے تبلیغی جماعت کی جو خصوصیات ہیں اور وسیع پیمانہ پراس جماعت سے جو دینی فوائد حاصل ہوئے ہیں ان