’’ ٹیلی ویزن نے فیملی کے توازن کو اس طرح بگاڑ دیا ہے کہ سینما اور ریڈیو ایسا نہیں کر سکے‘‘۔
تعلیم میں انحطاط
ٹی- وی کے مضراور فاسد اثرات نے تعلیم کو بھی نہیں چھوڑا اور تعلیم گاہوں کے لیے ایک آزمائش بنے ہوئے ہیں ؛ کیوں کہ اکثر بچے ٹی- وی کے شوق میں اور اس انہماک کی وجہ سے پڑھنے اور اسکول حاضر ہونے میں کوئی دل چسپی نہیں لیتے اور نتیجہ افسوس ناک نکل آتا ہے، بچوں کی ٹی- وی سے دل چسپی اور اس میں انہماک کا کچھ اندازہ اس سے ہوتا ہے کہ رابطۂ عالمِ اسلامی کے ترجمان اخبار ’’ أخبار العالم الاسلامي‘‘ میں مصر کے ایک سروے رپورٹ کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ مصر میں ۹۱ فیصد بچے ٹی- وی پر نشر ہونے والے اعلانات (اڈورٹائزمنٹ) (Advertisement) دیکھتے ہیں ، اس کے بعد لکھا ہے کہ
’’ یہ (۹۱ فی صد) کی نسبت، قطعی طور پر اس بات پر دلالت کرتی ہے کہ بچوں کی طرف سے تمام اوقات وایام میں اعلانات(اڈورٹائز منٹ) (Advertisement) کا مشاہدہ کرنے کا اہتمام ہوتا ہے۔ (۱)
مزید سنیے کہ
’’بچوں میں % ۸۳ ایسے تھے، جو فلمی اشتہارات کے صرف نام بتاسکے، جوٹی- وی پر دو ماہ سے زیادہ عرصے میں دیکھے گئے ، جب کہ %۶۹بچے ایسے تھے، جو فلم کے ناموں کے ساتھ تفاصیل بھی یاد رکھے ہوئے تھے، جو ٹی- وی پر تین ہفتوں میں آئے ہیں اور
-------------------------
(۱) أخبار العالم الاسلامي، بابت:۲۸ جمادی الثانی ۴۱۱ ۱ ؁ھ