سوال : قارئین ارمغان کے لئے کچھ پیغام آپ دیں گے ؟
جواب : کسی کے ظاہر اورحالات کو مخالف سمجھ کر یہ سمجھنا کہ یہ حالات اور یہ شخص اسلام دشمن ہے بالکل غلط ہے ، ظاہری طور پر شیو سینا کا ضلعی ذمہ دار کتنے غلط کاموں سینکڑوں مقدموں میں مبتلا مجھ جیسا اوت آدمی ، اسلام کے مخالف حالات میرے لئے بابری مسجد کی شہادت کے بعدحددرجہ نفرت زدہ تھے ، ایک مزے کی اور بات بتاؤں کہ ہمارے خاندان کا ایک لڑکا رشتہ کا میرا بھائی ڈاکٹر صاحب کا لڑکا مسلمان ہو کر عبدالرحمن بن کر گھر چھوڑ کر پھلت رہنے لگا تھا ، میری بھابھی بہت روتی تھی جب وہ یاد کرکے روتی تو مجھے بہت ترس آتا تھا اور کئی بار دل میں خیال آیا : اس حضرت جی کا اور خاتمہ کر آؤں جہاں اتنے مقدمے ہیں ایک مقدمہ اور سہی ، مگر احمد بھائی سچ کہتا ہوں جب اسلام کو میں نے پایا تو مجھے بالکل یہ محسوس ہوا یہ میرے اندر کی مایا تھی اور اسی فطرت پرمجھے پیدا کیا گیا تھا ، بابری مسجد کی شہادت کے بعدکسی شیو سینا کے ذمہ دار کا مسلمان ہونا کیسا عجیب لگتا ہے ، مگر مجھے بالکل عجیب نہیں لگا ، نہ مجھے لگا کہ کوئی انہونی فیصلہ ہوا ، بس یہ بات ہے کہ محبت سے کہنے والا کوئی نہ ملا اور ہمارے دیش کی کمزوری ہمارے حـضرت کے بقول جوش محبت ہے ، ہر ہتھیار اورہر حملے کا مقابلہ یہ قوم کر سکتی ہے ، مگر محبت کی دھار اس کے دل میں فورا ًاتر جاتی ہے ، مجھے مولانا صاحب کی محبت نے ایسا غلام بنایاکہ رواں رواں اب تک گرفتار ہے ، صرف محبت اور بے لوث ہمدردی نے مجھ جیسے سخت انسان کو شکار کیا ، نہ میں نے کوئی چمتکار دیکھا نہ کوئی دوسری بات ہوئی ، صرف اور صرف بے لوث محبت اور ہمدردی میری ہدایت کا ذریعہ بنی ۔
پھلت کا ایک نائی جمال الدین جو کھتولی دوکان کرتا ہے ، پانچ سال پہلے ساڑھے دس بجے اس نے مجھے بتایا کہ چودھری صاحب آپ یہاں پھر رہے ہیں ،