سوال : آپ کے والد کیا کرتے ہیں ؟
جواب : وہ ایک اسکول چلاتے ہیں اس کے پرنسپل ہیں وہ سی بی ایس ای بورڈ کا ایک اسکول چلاتے ہیں ، میرے ایک بڑے بھائی اس میں پڑھاتے ہیں ۔ میری بھابھی بھی پڑھاتی ہیں ، وہ سب کھیل سے دل چسپی رکھتی ہیں ، میری بھابھی بیڈمنٹن کی کھلاڑی ہیں ۔
سوال : ایسے آزاد ماحول میں زندگی گذارنے کے بعد ایسے پردہ میں رہنا آپ کو کیسا لگتا ہے ؟
جواب : انسان اپنے نیچر سے کتنا دور ہو جائے اور کتنے زمانہ تک دور رہے جب اس کو اس کے نیچر کی طرف آنا ملتا ہے وہ کبھی اجنبیت محسوس نہیں کرے گا وہ ہمیشہ فیل کرے گا کہ اپنے گھر لوٹ آیا ۔ اللہ نے انسان کو بنایا اور عورتوں کی نیچر بالکل الگ بنائی ۔ بنانے والے نے عورت کا نیچر چھپنے اور پردہ میں رہنے کا بنایا ۔ اسے سکون و چین لوگوں کی ہوس بھری نگاہ سے بچے رہنے میں ہی مل سکتا ہے ۔ اسلام دین فطرت ہے جس کے سارے حکم انسانی نیچر سے میل کھاتے ہیں ، مردوں کے لئے مردوں کے نیچر کی بات اور عورتوں کے لئے عورتوں کے نیچر کی بات ۔
سوال : آپ کی عمر کتنی ہے ؟
جواب : میری تاریخ پیدائش ۶ ؍ جنوری ۱۹۸۸ ؁ ء ہے گو یا میں ۲۲ ؍ سال کی ہونے والی ہوں ۔
سوال : مسلمان ہوئے کتنے دن ہوئے ؟
جواب : ساڑے چھ مہینے کے قریب ہو ئے ہیں ؟
سوال : آپ کے گھر میں آپ کے اتنے بڑے فیصلے پر مخالفت نہیں ہوئی ؟