باب۸
اختلافات ختم کیجئے ، مرنے کی تیاری کیجئے حضرت اقدس تھانویؒ کی امت سے درخواست
حکیم الامت حضرت مولانا اشرف علی صاحب تھانویؒ فرماتے ہیں :
( درخواست ) خود بھی ملاحظہ فرمائیے اور جہاں تک ممکن ہو دوسروں کو بھی دکھلاکر ثواب لیجئے میری حیات میں بھی اور بعد حیات بھی ۔
بعدالحمدوالصلوٰۃ ، اس تحریر کا باعث یہ ہے کہ راقم ( اشرف علی ) کی عمر اس وقت ساٹھ ستر کے بیچ میں ہے ، جو حدیث کی رو سے امت محمدیہ کی عمر کا اکثر کے اعتبار سے گویا اختتام ہے اور ای سے وقت میں دوسرے اوقات سے بہت زیادہ آخرت کی تیاری کی ضرور ت ہے ، اور یہ تیاری ایمان کے بعد اعمال کی درستی ہے ، اور ان اعمال میں سب سے زیادہ اہم حقوق العباد کی صفائی ہے ، اور اس صفائی کی صرف دوصورتیں ہیں ایک ادائیگی اور دوسرے معافی ، بحمداللہ قابل ادا حقوق میں تو کبھی قصداً کوتاہی نہیں کی گئی ، البتہ معافی کے قابل حقوق میں یعنی اہل حقوق سے معافی چاہنے میں کوتاہی یقینا رہی ، اور اس میں عموماً لوگوں کو ابتلاء ہے اس لئے واجب ہے کہ اس فریضہ کواہتمام سے اداکیاجائے ، اسی مقصدکے پیش نظر چنداحادیث اور اس کے ساتھ خطاب پیش کروں گا ۔ وباللہ التوفیق ۔
( اشرف السوانح ص۱۲۸ج۳ )