(و) عورت کی عمر نو سال سے کم نہ ہو, اور مرد کی عمر بارہ سال سے کم نہ ہو.
(ڑ) اگر چھونے والی عورت ہے اور شہوت کا دعوی کرے تو شوہر کو عورت کی خبر کے متعلق صدق کا ظنِ غالب حاصل ہو جائے 'اسی طرح اگر چھونے والا مرد ہے اور شہوت کا دعوی کرے تو بھی شوہر کو اس کی خبر پر صدق کا ظنِ غالب ہونا ضروری ہے. فی الدر مختار ثبوت الحرمة بلمسها مشروط بان يصدقها ويقع اكبر رائه بصدقها. کیونکہ عورت کے اس دعوی میں شوہر کا حق باطل کرنا ہے. اور اس کے لئے صرف دعوی کافی نہیں ہے. بلکہ شوہر کی تصدیق ضروری ہے. یا پھر شرعی گواہ (دو مرد یا ایک مرد اور دو عورتیں) ہوں تو پھر شوہر کی تصدیق کی حاجت نہ ہوگی.
اگر ثبوتِ شرعی نہ ہوسکے لیکن شوہر کو علم ہو تو ديانة حرمت ثابت ہوجائے گی. لہذا اگر خاوند کو غالب گمان ہو کہ ایسا واقعہ ضرور ہوا ہے جس سے حرمتِ مصاہرت متحقق ہوجاتی ہے. تو اس کو انکار کرنا حرام ہے. (حیلہ ناجزہ)
اگر عورت اپنے دعوے میں سچی ہو لیکن شوہر کو صدق کا ظن غالب نہ ہوتاہو یا شوہر نے بد راہی اختیار کرکے جھوٹا حلف کرلیا اور شہادت معتبرہ