(۲) کمپنیوں کی قسمیں اور ان کے احکام

جائنٹ اسٹاک کمپنیاں بنیادی طور پر دو قسم کی ہیں ، ایک وہ، جن کا کاروبار حرام وناجائز ہے، جیسے شراب بنانے کی کمپنی ،سودی کاروبار کی بینک اور انشورنس کمپنی وغیرہ ، دوسرے وہ جن کا کاروبار بنیادی طور پر حلال وجائز ہے۔ مثلا: ٹیکسٹائل کمپنی ،آٹو موبائل کمپنی وغیرہ اور اسی لحاظ سے ان کمپنیوں میں حصہ داری کے احکام بھی مختلف ہیں۔
حرام کمپنیوں میں سرمایہ کاری کا حکم
جہاں تک ان کمپنیوں میں سرمایہ کاری کا تعلق ہے ،جن کا بنیادی کاروبار حرام وناجائز ہے ، تو بالکل واضح وظاہر ہے کہ ایسی کمپنیوں میں سرمایہ کاری اور شرکت قطعاً حرام اور سخت معصیت ہے ؛کیوں کہ شیئر خرید نے والا جیسا کہ اوپر عرض کرچکا ہوں ، کمپنی کا برابر کا حصہ دار ہے ؛ اس لیے کمپنی کا معصیت میں ابتلا در اصل اس شیئر ہولڈر کا ابتلا وارتکاب ہے اور پھر اس سے ہونے والی آمدنی بھی صریح حرام ہے۔ ایک تو اس کمپنی میں حصے داری اور شرکت بہ ذات ِخود حرام وناجائز ہے اور دوسرے اس سے حاصل ہونے والا نفع بھی حرام وناجائز ہے ؛ اس لیے اس قسم کی کمپنیوں میں ہرگز شیئر ہولڈر نہ بننا چاہیے ۔
حلال کاروبار والی کمپنیوں میں سرمایہ کاری
اب رہی دوسری قسم کی کمپنیاں جن کا کاروبار حلال ہے ، تو اس میں سرمایہ کاری اور شرکت کا حکم بھی واضح ہے ،کہ جائز ومباح ہے ؛کیوں کہ مباح کام میں شرکت کی شریعت نے اجازت دی ہے ، عقدِ شرکت کے جواز پر متعدد احادیث دلالت کرتی ہیں: