حمد ِ باری تعالیٰ ٭از: آفتاب اظہرؔ صدیقی٭
سبھی تعریف ہے اس کی اسی کی حمد خوانی ہے
ہماری جان پر ہر دم خدا کی مہربانی ہے
کہیں گرمی، کہیں سردی، کہیں بارش، کہیں طوفاں
خدا کا ہی کرشمہ ہے اسی کی حکمرانی ہے
وہی کرتا ہے دن روشن وہی پھر رات لاتا ہے
حکومت اس کی چوطرفہ زمینی آسمانی ہے
وہی خالق، وہی مالک، وہی اوّل، وہی آخر
کہ ہے وہ ذاتِ لاثانی کوئی اس کا نہ ثانی
جسے چاہے وہ عزت دے، رکھے ذلت میں وہ جس کو
کہ وہ مرضی کا مالک ہے وہی قسمت کا بانی ہے
وہی ہم کو جِلاتا ہے، وہی پھر موت دیتا ہے
کھلاتا ہے، پلاتاہے اسی کا دانہ پانی ہے
تری حمد و ثنا یارب کرے کیا آفتاب اظہرؔ
زباں ناپاک ہے اس کی قلم کی جاں فشانی ہے