نعت ِ پاک٭از: آفتاب اظہرؔ صدیقی٭
رشتہ اللہ سے بندوں کا ملانے والے
آیتیں رب کی وہ پڑھ پڑھ کے سنانے والے
تھا ہر اک سمت گھٹا ٹوپ اندھیرا چھایا
روشنی لے کے زمانے میں وہ آنے والے
ان کے اخلاق کے ہر پھول سے خوشبو ہے عیاں
حسن و کردار کے بے مثل خزانے والے
ان کی ہر بات نصیحت ہے زمانے کے لیے
درس سچائی کا انساں کو پڑھانے والے
ان کو صادق و امیں رحمتِ عالم کہیے
ایسے القاب ہیں آقاؐ مرے پانے والے
ان سے قائم ہے زمانے میں اخوت کی فضا
وہ ہیں انسان کو انسان بنانے والے
ان کے صدقے میں بنائی گئی دنیا اظہرؔ
یاد کرتے ہیں انہیں سارے زمانے والے