جیسے :
محترم حضرات !اب میں آپ کے سامنے ایک ایسے خطیب کو دعوت دینے جارہا ہو ں جنہیں آپ میدانِ خطابت کا شہسوا ر بھی کہہ سکتے ہیں اور فن ِخطابت کا تجربہ کار بھی ، کیونکہ وہ زبان وبیان میں ایسی مہارت رکھتے ہیں کہ تھوڑ ی دیر کی گفتگو میں سامع کو اپنا بنا لیتے ہیں ،ان کی تقریر ایک دردمنددل ،ایک مجاہدانہ حوصلہ ،ایک عالمانہ سوچ اور صحیح فکرکا آئینہ دار ہوا کرتی ہے، جب وہ بولناشروع کرتے ہیں تو معلوم ہوتاہے کہ علم کا ایک دفتر کھل گیا ہے ؛ میری مراد خطیبِ ملت، مفکرِ امت، قاطع ِ شرک و بدعت حضرت مولانا ……… صاحب…ہیں۔ حضرت تشریف لائیں اور اپنے زورِ بیانی و سحر لسانی سے ہم سامعین کو مستفیض فرمائیں۔
بھلائی ، خیر خواہی اور وفا داری و ایثاری
نبی ﷺ کے جاں نثاروں کی یہی خصلت ہے عادت ہے
ملی ہے جو وراثت میں نبی ﷺ کے چار یاروں سے
صداقت ہے، عدالت ہے، سخاوت ہے، شجاعت ہے