ہے،جیسے: مسلمۃ سے مسلمات، کاتبۃ سے کاتبات ،حافظۃ سے حافظات
گول ’’ۃ‘‘ کو تائے مدوَّرہ اور لمبی ’’ت‘‘ کو تائے مستطیلہ کہتے ہیں۔)

سبق(۳۸)
{جمع کی شکلیں}

٭ اسمائے رباعی(چارحرف والے اسم) وخماسی(پانچ حرف والے اسم) کی جمع اکثر منتہی الجموع کے وزن پر آتی ہے،
منتہی الجموع: وہ جمع مکسر ہے جس کی مزید جمع مکسر نہ آسکے۔
اس کی پہچان یہ ہے کہ الف جمع کے بعد دو حرف ہوںاور پہلا مکسور ہو، جیسے: مَسَاجِدُ، یا ایک حرف مشدد ہو، جیسے: دَوَابُّ، یا تین حرف ہوں اور بیچ کا حرف ساکن ہو جیسے مَفَاتِیْحُ۔
اور اس کے مشہور وزن تین ہیں:(۱) مَفَاعِلُ جیسے مَسْجِدٌ سے مَسَاجِدُ،
(۲) مَفَاعِیْلُ جیسے مِفْتَاحٌ سے مَفَاتِیْحُ،
(۳)فَعَائِل ُ جیسے رِسَالَۃٌ سے رَسَائِلُ۔
٭بعض جمع واحد کے غیر لفظ سے آتی ہے ،جیسے اِمْرَأۃٌ کی جمع نِسَائٌ،
ایسی جمع کو جمع من غیر لفظہ کہتے ہیں ۔
٭کبھی واحد اسم جمع کے معنی دیتا ہے ،جیسیقَوْمٌ، (جماعت)،رَکْبٌ(کافلہ)،
ایسے اسم کو اسم جمع کہتے ہیں۔
٭ بعض الفاظ کی جمع خلاف قیاس آتی ہے ،جیسیأُمٌّ (ماں)کی جمع أُمَّہَاتٌ،