جوف ابن آدم الا التراب أو یتوب علیٰ من تاب ۔( بخاری ومسلم )
اگر آدم کی اولاد کے پاس مال سے بھری ہوئی دو وادیاں ہوں تو وہ تیسری کی تلاش میں ہوگا ، آدم کی اولاد کا پیٹ صرف (قبر کی )مٹی ہی بھر سکتی ہے یا یہ کہ اﷲ تعالیٰ اپنی جانب رجوع کرنے والے پر مہربانی فرمائیں ۔
امت کے سردار ا کو اس امت پر تنگدستی اور غربت کی وجہ سے کوئی اندیشہ نہ تھا ، اگر تھا تو مالداری وثروت کی وجہ سے تھا ۔
فواﷲ لاالفقر أخشیٰ علیکم ولکن أخشیٰ علیکم أن تبسط علیکم الدنیا کما بسطت علیٰ من کان قبلکم فتنافسوھا کما تنافسوھا وتھلککم کما أھلکتھم (بخاری ومسلم )
خدا کی قسم میں تمہارے اوپر فقر وتنگدستی سے خوف نہیں کھاتالیکن اس سے ڈرتا ہوں کہ تم پر اگلے لوگوں کی طرح دنیا پھیلا دی جائے اور تم اس میں ایک دوسرے پر بازی لے جانے کی کوشش میں لگ جاؤ اور پھر نتیجہ یہ ہو کہ دنیا تمہیں ٹھیک اسی طرح ہلاک کردے جیسے اگلوں کو ہلاک کرچکی ہے ۔
عورت کا فتنہ :
شر وفساد اور قتل وخونریزی کی دوسری بنیاد ’’شہوت فرج ‘‘ اور نفسانی خواہشات کا جنون ہے ، حق تعالیٰ نے ایک مدت مقررہ کے لئے دنیا کی بقاء کا فیصلہ فرمارکھا ہے ، اس کی حکمتِ بالغہ نے اس سلسلہ ٔ بقاء کے جاری رکھنے کیلئے تمام جانداروں میں دو صنفیں مذکر ومونث بنا کر دونوں میں ایک دوسرے کیلئے بے پناہ کشش رکھ دی ہے لیکن انسان کو اس کشش کے بروئے کار لانے کیلئے فطرت کے معتدل تقاضوں کا لحاظ کرتے ہوئے قدرے وسعت کے ساتھ خاص