(۳) تیسرا مرحلہ: آنکھوں کی حرکیات کے تجزیہ پر مشتمل ہوتا ہے جس کو Electro Occulogramکے ذریعہ معلوم کیا جاتا ہے ۔ آنکھوں کی حرکیات کے تجزیہ کو دو اقسام میں تقسیم کرتے ہیں
(A)  Non-Rapid Eye Movementیاست بصارتی حرکت جسے مختصراNREMکہتے ہیں
(B) Rapid Eye Movement تیز بصارتی حرکت جس کو مختصراً REMکہتے ہیں
یہ دنوں حرکیات خوابیدگی کی حالت میں ایک کے بعد دیگرے جاری رہتی ہیں اور ایک جوان آدمی میں یہ دونوں عمل معمول کے مطابق 90تا100منٹ میں مکمل ہوتے ہیں۔ البتہ بچوں میں یہ عمل10منٹ میں مکمل ہوتا ہے۔
نیند اور خواب کے مرحلے
در اصلNREMیا ست بصارتی حرکت کل ملا کر چار منزلوں سے گزرتی ہے ان منزلوں کے دوران سانس کی رفتار یکسا ں طور پ ربرقرار رہتی ہے۔ قلب کی حرکت معمول سے کم ہوتی ہے، خون کی روانی گھٹ جاتی ہے اور اس سے عضلات کو پوری طرح سکون اور آرام ملتا ہے۔ جب اس حالت کوEEGکے ذریعہ دیکھا جاتا ہے تو پتہ چلتا ہے کہ اس وقت نیند کم ہوکر معمول کے مطابق ہوجاتی ہے۔ چنانچہ اس عرصہ میں جو دماغ سے موجیں نکلتی ہیں ان کی رفتار سست ہوتی ہے۔ نیند کا پہلا مرحلہ کل نیند کا 5تا10فیصد ہوتا ہے۔ دوسرے مرحلہ میں یہ بڑھ کر 50فیصد جب کہ تیسرا مرحلہ 15فیصد اور چوتھا مرحلہ تقریباً20فیصد پر مشتمل ہوتا ہے اور اگرREMیعنی تیز بصارتی حرکیات کے مرحلہ کا تجزیہ کیا جائے تو معلوم ہوتا ہے کہ اس عرصہ میں جو تیز رفتا رموجیں دماغ کے پچھلے گوشوں سے نکلتی ہیں اس کی وجہ