جب نصرانی نے سونے کا محل خواب میں دیکھا
ایک بار عاشورہ کے روز قاضی کے پاس ایک فقیر آیا اور اس نے کہا کہ اس دن کے حق سے مجھے کچھ دو اس نے روگردانی کی لیکن ایک نصرانی نے اسے دیکھ کراتنا دیا کہ وہ راضی ہوگیاجب رات ہوئی تو قاضی نے خواب دیکھا کہ ایک سونے کا محل ہے اور ایک سرخ یاقوت  کا، اس نے پوچھا کہ یہ دونوں محل کس کے لئے ہیں جواب ملا کہ تھے تو تمہارے ہی لئے اگر تم اس فقیر کی حاجت پوری کردیتے جب تم نے اسے نہ دیا تو فلاں نصرانی کو یہ دونوں مل گئے۔ وہ سہما ہوااٹھا اور نصرانی کے پاس آیا اور اس سے کہنے لگا شب گزشتہ کو جو فقیر کو تونے دیا تھا اس کا ثواب میرے ہاتھ ایک لاکھ میں بیچ ڈال، اس نے جواب دیا کہ اگرتو ان دونوں محلوں کے چوکھٹ کی قیمت بھی ایک لاکھ دے گا تو تجھے نہ دوں گا میں شہادت دیتاہوں کہ خداکے سوا کوئی معبود نہیں اور بیشک محمد صلی اللہ علیہ وسلم خداکے پیغمبرہیں اور مسلمان ہوگیا۔ (نزہۃ المجالس صفحہ ۳۸۲؍ جلد اول، علامہ عبدالرحمن صفویؒ)
ماں کی خدمت پر اللہ تعالیٰ کا انعام: ایک مبارک خواب
ابو یزید بسطامیؒ کہتے ہیں کہ ایک بار میری ماں نے پانی مانگا میں جو لایا تو ماں کو سوتا پایا میں اپنی ماں کی بیداری کے انتظار میں کھڑارہا۔جب میری ماں بیدارہوئیں تو پوچھا کہ پانی کہاں ہے؟ میں نے آبخورہ دیدیا، میری انگلی پر تھوڑا ساپانی بہ کر گرپڑاتھا اور سردی کی شدت سے اس پر جم گیا پھر جو میں نے آبخورہ لیا تو میری انگلی کی کھال اڑگئی اور خون بہنے