زوجہ مولانا عزیرگلؒ کاعالمانہ جواب
مولانا عزیر گل ؒ کے ساتھ ایک نومسلم انگریز خاتون نے نکاح کیااس خاتون کا نام ’’جیتی‘‘تھا جب مسلمان ہوئی توپھر’’مدرMother‘‘کے نام سے مشہور ہوئی،یہ خاتون دیوبند آئی اورمولانا عزیر گل ؒ کے ساتھ شادی کی پھر مولانا عزیر گلؒ سے تعلیم حاصل کرکے قرآن مجید کا انگریزی میں ترجمہ لکھا،اپنی ایک انگریزی تصنیف دی بیلنس آف وے(صراط مستقیم) میں قبولیت اسلام سے پہلے کی زندگی اوربعد کے حالات تفصیل سے لکھے ہیں۔
وہ بڑی پاکباز اورعالمہ تھی،ایک دفعہ مولانا صاحب نے فرمایا کہ اللہ تعالیٰ فرماتے ہیں، کہ ’’الرِّجَالُ قَوَّامُوْنَ عَلَی النِّسَآئِ‘‘مرد عورت کانگران ہے تواس نے جواب دیا،کہ اللہ تعالیٰ فرماتے ہیں:’’وَلِلرِّجَالِ عَلَیْہِنَّ دَرَجَۃً‘‘ آپ کا ایک درجہ ہے(only one degree) اوروہ ڈگری طلاق کی ہے جو شوہر کے ہاتھ میں ہوتی ہے۔

اسراف
وضوء اورغسل کرتے وقت پانی زیادہ استعمال کرنااسراف ہے،پانی کا بے دریغ استعمال نہیں کرناچاہیے،ہمارے اکثر ساتھی پانی کے استعمال میں احتیاط نہیں کرتے ہیں،ہم یہ سوچتے ہیں کہ مفت پانی ہے جتنا استعمال کرسکتے ہو استعمال کرو،حالانکہ یہ اسراف میں داخل ہے،افریقہ والے پانی کے استعمال میں بہت زیادہ احتیاط کرتے ہیں،مزدلفہ میں ہمارے ساتھ ایک افریقہ والا وضوء کررہاتھا میں نے ساتھیوں کو بتایا ،کہ’’ دیکھیں یہ لوگ پانی میں کتنی احتیاط کرتے ہیں ‘‘چنانچہ اس نے پیپسی(Pepsi)کی چھوٹی بوتل میں پانی لاکر اس سے استنجاء کیا اورپھر وضوء کیا۔[ اور اس کے بعد بچا ہوا پانی بھی پی گیا]