فصل رابع۔ موجبات غسل
کپڑے کے ساتھ دخول سے غسل ہے یا نہیں

(سوال ۱۰۶) مرد کا حشفہ عورت کے عضو مخصوص میں داخل ہونے سے غسل فرض ہوتا ہے خواہ منی نکلے یا نہ نکلے۔ اگر دونوں کپڑے پہنے ہوں اور مندرجہ بلا صورت پیش آئے تو دونوں پر غسل فرض ہے یا نہیں؟
(جواب)اس صورت میں بھی احوط یہ ہے کہ دونوں غسل کریں۔درمختار میں ہے الا حوط الوجوب الخ۔(۱)فقط۔
جاگتے ہوئے منی نکلے تو بھی غسل ہے
(سوال ۱۰۷) اگر جاگتے میں منی نکل جائے تو غسل کرنا چاہئے یا نہ۔
(جواب)منی اگر جاگتے میں نکلے تب بھی غسل کرنا واجب ہے ۔(۲) فقط۔
جماع کے بعد فوراً غسل ضروری نہیں
(سوال ۱۰۸) بعض حضرات بعد از جماع فوراً غسل کا حکم دیتے ہیں جس میں احتمال بیماری کا ہے ، کیا شرعی حکم ایسا ہی ہے ؟
(جواب)یہ بہتر ہے لیکن اگر کچھ تاخیر کرے تو کچھ حرج اور گناہ نہیں ہے ۔(۳)فقط۔
سپاری کا کچھ حصہ داخل ہو تو عورت پر غسل ہے یا نہیں
(سوال ۱۰۹) اگر مرد کے پیشاب کے مقام کی سپاری کا حصہ پائو یا نصف یا تہائی حصہ فرج میں داخل ہوجاوے اور جوش کے ساتھ منی نکل کر فرج میں داخل ہوجاوے ۔ اس صورت میں عورت پر بھی غسل واجب ہوگا یا نہیں؟
(جواب)عورت پر غسل واجب نہیں۔(۴)فقط۔
منی کو روک لیا جائے تو کیا حکم ہے
(سوال ۱۱۰) مجھ کو چند روز سے بد خوابی زیادہ ہوتی ہے اور ساتھ ہی یہ عادت بھی ہوگئی ہے کہ احتلام کو روک لیتا ہوں ، بعض مرتبہ تو قطرہ وغیرہ کچھ نہیں نکلتا اور بعض وقت ایک آدھ قطرہ نکل آتا ہے ۔ مجھ کو بعض وقت یہ شبہ ہوتا ہے کہ قطرہ کو دکر
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
(۱)اولج حشفۃ او قدرھا ملفوفۃ بخرقۃ ان وجد لذۃ الجماع وجب الغسل والا لا ، علی الا صح، والا حوط الوجوب(درمختار) ای وجوب الغسل فی الوجھین، بحر ، وسراج الخ (رد المختار ابحاث الغسل ج ۱ ص ۱۵۲و ج۱ ص ۱۵۳۔ط۔س۔ج۱ص۱۶۴)ظفیر۔
(۲)وفرض الغسل عند خروج منی من العضو (ایضاً ج۱ ص ۱۴۸۔ط۔س۔ج۱ص۱۵۹)ظفیر۔
(۳)عن ابن عمر قال ذکر عمر بن الخطاب ؓ لرسول اﷲ صلی اﷲ علیہ وسلم انہ تصیبہ الجنابۃ من اللیل فقال لہ رسول اﷲ صلی اﷲ علیہ وسلم تو ضأ واغسل ذکرک ثم لم متفق علیہ (مشکوٰۃ باب مخالطۃ الجنب وما یبا ح لہ ص ۴۹)ظفیر۔
(۴)وفرض الغسل الخ عند ایلا ج حشفۃ ھی ما فوق الختان الخ اوا یلاج قدر ھا من مقطوعھا ولو لم یبق منہ قدرھا قال فی الا شباہ لم یتعلق بہ حکم ولم ارہ (در مختار) قولہ ھی ما فوق الختان کذا فی القاموس و زاد الزیلعی من راس الذکر فی حاشیۃ نوح افندی ھی راس الذکر الی الختان الخ (رد المختار ابحاث الغسل ج۱ ص ۱۴۹ وج ۱ ص۱۵۰۔ط۔س۔ج۱ص۱۶۱)ظفیر۔