الباب الثالث فی المیاہ
فصل اول پاک وناپاک پانی
دہ دردہ سے کم پانی نجاست پڑنے سے ناپاک ہوجاتا ہے

(سوال ۱۲۹) مثلاً قصبہ گودرہ میں شدید خشک سالی کی جہ سے تالاب وغیرہ خشک ہوگئے ، دھو بیوں کو کپڑے دھونے کی سخت دشواری ہے ، ایسی حالت میں ایک ندی کے قریب انہوں نے پانچ پانچ گز جھیرا کھود کر کپڑے دھونا شروع کئے اور جس وقت کپڑے سفید ہوگئے تو وہ پانی نکال ڈالا اور دوسرا پانی بھر لیا ، پھر وہی کپڑے اس پانی میں پاک کر لئے ، اس پانی میں ہر قسم کے کپڑے صاف ہوتے ہیں ۔ اب دریافت طلب یہ بات ہے کہ یہ پانی پاک ہے یا نہیں ، اور اس طرح یہ کپڑے پاک ہوتے ہیں یا نہیں اور اس پانی کے دھلے ہوئے کپڑوں سے جو نماز پڑھی ہے اس کا اعادہ کرنا ہوگا یا نہیں؟
(جواب)ٹھیرا ہوا قلیل پانی جو دہ دردہ سے کم ہو نجاست کے واقع ہوجانے سے ناپاک ہوجاتا ہے نجس کپڑا اس میں پاک نہ ہوگا ۔ اور اگر نا پاک کپڑا اس میں ڈال دیا جائے گا تو پانی نجس ہوجائے گا ۔(۱) دوسرے ناپاک کپڑے اور خود وہ ناپاک کپڑا اس سے پاک نہ ہوگا۔(۲) پچھلی پڑھی ہوئی نمازیں جو اس پانی میں دھلے ہوئے کپڑوں سے پڑھی گئی ہیں جب تک یقین کے ساتھ یہ ثابت نہ ہو کہ ناپاک کپڑا اس پانی میں ڈالا گیا ہے اور اس کے بعد ان نمازیوں کا کپڑا اس ناپاک پانی میں گرا ہے اس وقت تک اعادہ ان پچھلی نمازوں کا لازم نہیں ہے ۔ الغرض چونکہ یہ تحقیق اوریقین دشوارہے اس لئے پچھلی نمازوں کا اعادہ ضرور ی نہیں ہے۔(۳) البتہ آئندہ کو احتیاط رکھنی چاہئے ۔فقط واﷲ اعلم۔
لید، گوبر سے کھانا پکانا اور پانی گرم کرنا کیسا ہے
(سوال ۱۳۰) اگر وضو کے لئے حیوانات مثل بکری گائے بھینس، گھوڑا ، اونٹ اور آدمی کے گوبرو پاخانہ وغیرہ سے جلا کر پانی گرم کیا جائے یا روٹی پکائی جائے تو اس پانی سے وضو وغسل جائز ہے یا نہیں ؟ اور وہ روٹی کھانی جائز ہے یا نہیں؟
(جواب)وہ پانی پاک ہے اس سے وضو وغسل درست ہے اور جو روٹی اس سے پکائی جائے وہ بھی پاک ہے اس کا کھانا درست ہے ۔(۴)فقط۔
حوض میں غسل جنابت وغیرہ جائز ہے یا نہیں اور اگر کتا یا خنزیر گر کر مرجائے تو کیا حکم ہے
(سوال ۱۳۱/۱) حوض کے اندر غسل جنابت یا حیض و نفاس درست ہے یا نہیں ۔ اور اگر حوض میں خنزیر یا کتا گر کر مرجائے تو پانی اس کا پاک ہے یا ناپاک؟
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
(۱)وکل ماء (قلیل) وقعت النجاسۃ فیہ لم یجز الوضؤ بہ قلیلا کانت النجاسۃ او کثیر ا (ہدایہ باب الماء الخ ج۱ ص ۴۱)ظفیر۔(۲)وبول انتضح کرؤس ابر الخ لکن لو دقع فی ماء قلیل نجسہ فی الا صح (درمختار) قال فی الحلیۃ لو وقع ھذا الثوب المنتضح علیہ البول مثل رؤس الا بر فی الماء القلیل ھل ینجس ففی الخلاصۃ الخ ینجس الخ المختار انہ ینجس ان کان اکثر من قدر الدرھم (رد المختار باب الا نجاس ج۱ ص ۲۹۷وج۱ ص۲۹۸۔ط۔س۔ج۱ص۳۲۲…۳۲۳)ظفیر۔
(۳)الیقین لا یزول بالشک (الا شباہ والنظائر القاعدہ الثالثہ ص ۷۵)ظفیر۔(۴)لا یکون نجسا ماء قذرو الا لزم نجاسۃ الخبز فی سائر الا مصار (درمختار) المرادبہ العذرۃ والروث (رد المختار باب الانجاس ص ۳۰۱ ج۱۔ط۔س۔ج۱ص۳۲۶)ظفیر۔