عورت کے باپ کے خاندان میں مروج ہو ‘اور درمختار میں خلاصہ سے منقول ہے کہ اس کی بہنوں اور پھوپھیوں کے مہر کا اعتبار ہوگا والحرۃ مہر مثلہا الشرعی مہر مثلہا اللغوی ای مہر امراۃ تماثلہا من قوم ابیہا الخ (۱) فقط
مہر جو رسمی طورپر مقرر ہوتا ہے وہ لازم ہے یا نہیں ؟
(سوال ۱۲۹۵) مہر معجل ہندوستان میں محض رسمی طور سے مقرر کیا جاتا ہے نہ کہ مرد کی نیت دینے کی ہوتی ہے اور نہ عورت کے لینے کی نیت ہوتی ہے اس صورت میں مہر لازم ہوتا ہے یا نہیں اور آنحضرتﷺ کے و قت میں کسی وارث نے دعویٰ مہر کا کیا ہے یا نہیں ؟
(الجواب ) عرب میں دستور اکثر اپنی حیات میں مہر کے ادا کردینے کا تھا اور مہر کی مقدار آنحضرت ﷺ کے زمانہ میں اس قدر نہ ہوتی تھی جس کا تحمل شوہرکو نہ ہو یا ادا دشوار ہو بہرحال مسئلہ شرعی یہ ہے کہ جو مقدار مہر کی مقرر ہوجاوے وہ شوہرپر لازم ہوجاتی ہے دینے کی نیت ہونا یا نہ ہونا اس پر کچھ اثر نہیں کرتا۔ (۲) فقط
جس نے غلط تعریف کرکے شادی کرائی اس سے مہر وصول کیاجاسکتا ہے یا نہیں ؟
(سوال ۱۲۹۶) زید نے بکر کو اشتعال دیا کہ مسماۃ زینب بیوہ منکسر المزاج خوبصورت ہے بکر نے اس بیان پر اس سے نکاح کرلیا بعدہ معاملہ مشاہدہ سے معلوم ہوا کہ زید کی تعریف کے برعکس ہے اور مطلقہ ہے اب بکر اپنی منکوحہ کو طلاق دیتاہے اگرمنکوحہ مہر طلب کرے تو بکر زید سے رجوع کرسکتا ہے کیونکہ زید نے بکرکو دھوکہ دیا ہے ؟
(الجواب) اس صورت میں بکر کے ذمہ مہر واجب ہوا بوجہ استمتاع منکوحہ کے توبکر اس کو زید سے نہیں لے سکتا قال اﷲ تعالیٰ ان تبتغوا بامالکم محصنین غیر مسافحین (۳) پس معلوم ہوا کہ مہر کاذمہ دار شوہر ہی ہے زید سے اس کو لینے کا حق نہیں ہے اور اس دھوکہ دہی کی وجہ سے زید کے ذمہ ضمان مہر کی لازم نہ ہوگی۔ فقط
پونے تین روپے مہر ہوسکتا ہے یا نہیں ؟
(سوال ۱۲۹۷) مہر ۱۲ کا ہوسکتا ہے یا نہیں ؟
(الجواب ) مہر شرعی کم از کم دس درہم کا ہے‘ (۴)جس کے تقریباً پونے تین روپے ہوتے ہیں ( دس درہم
-----------------------
(حاشیہ صفحہ گزشتہ ) المثل لہالان البینات لا ثبات خلاف الظاہر وان کان مہر المثل بینہما تخالفا فان حلفا او برہنا
قضی بہ وان برہن احدہما قبل برہانہ ( الدرالمختار علی ہامش رد المحتار باب المہر مطلب مسائل الاختلاف فی المہر ج ۲ ص ۴۹۷۔ط۔س۔ج۳ص۱۴۸) ظفیر
( ۱) ایضاً مطلب فی بیان مہر المثل ص ۴۸۷ ج ۲۔ط۔س۔ج۳ص۱۳۷‘ ظفیر
( ۲) تجب العشرۃ ان سماہا او دونہا و یجب الاکثر منہا ان سمی الاکثر( درمختار ) افاد ان المہر و جب بنفس العقد (رد المحتار باب المہر ج ۲ ص ۴۵۴۔ط۔س۔ج۳ص۱۰۱تا ۱۰۲) ظفیر
(۳) سورۃ النساء : ۴ ظفیر ( ۴) واقلہ عشر دراہم فضۃ وزن سبعۃ مثا قل الخ و تجب العشرۃ ان سماہا اودونہا( الدرالمختار علی ہامش رد المحتار باب المہر ج ۲ ص ۴۵۴۔ط۔س۔ج۳ص۱۰۱تا ۱۰۲) ظفیر