مہر لازم ہے خواہ حالت ظاہر نہ کی ہو
(سوال ۱۳۰۲) نکاح کے وقت لڑکی کی حالت قاضی صاحب پر ظاہرنہیں کی تو نکاح صحیح اور مہر لازم ہوایا نہیں ؟
(الجواب ) حالت ظاہر کی یا نہ کی نکاح ہوگیا اب کچھ نہیں ہوسکتا اور مہر لازم ہوگیا ۔ (۱) فقط
مہر ختم نہیں ہوسکتا
(سوال ۱۳۰۳) اگر نابالغ لڑکے کے مہر توڑنے کی نالش عدالت میں کی جاوے تو مہر ٹوٹ سکتا ہے یا نہیں ؟
(الجواب ) نہیں ٹوٹ سکتا ۔ (۲) فقط

عورت کے معاف کرنے سے مہر معاف ہوجاتا ہے
(سوال ۱۳۰۴) اگر عورت بالغہ پہلی رات کو اپنا زر مہر معاف کردے تو معاف ہوجاوے گا یا نہیں ؟
(الجواب ) مہر معاف ہوگیا اگر زوجہ اس معافی کو تسلیم کرلے یا دو گواہ مرد عادل یا ایک مرد اور دو عورتیں عادلہ گواہ ہوں تو مہر ساقط ہوگیا مطالبہ مہر کا پھر کوئی نہیں کرسکتا اور اگر زوجہ کو معافی سے انکار ہو اور گواہ شرعی موجود نہ ہوں تو مطالبہ زوجہ صحیح ہوگا۔ (۳) فقط

بغیر خلوت طلاق سے نصف مہر ہوتا ہے
(سوال ۱۳۰۵) اگر زوج اپنی منکوحہ کو نکاح کے بعد بغیر رخصتی کے طلاق دے دے‘ مہر لازم ہوگا یا نہیں ؟
(الجواب ) بدون خلوت صحیحہ اور وطئ و جماع کے اگر شوہر اپنی زوجہ کو طلاق دیدے تو آدھا مہر لازم ہوتا ہے جیسا کہ فرمایا اﷲ تعالیٰ نے وان طلقتموہن من قبل ان تمسوہن و قد فرضتم لہن فریضۃ فنصف مافرضتم (۴)الایۃ وفی الدرالمختار و یجب نصفہ بطلاق قبل وطئ او خلوۃ (۵) الخ فقط
مہر میں مکان دینا درست ہے اور اس سے نکاح ہوگیا
(سوال ۱۳۰۶) ایک شخص نے ایک عورت سے نکاح کیا اور مہر میں ایک مکان دینا مقرر کیا اور کہا کہ
-------------------------
(۱) و ینعقد ای النکاح یثبت و یحصل انعقادہ بالا یجاب والقبول ( ردالمحتار ج ۲ ص ۳۰۳۔ط۔س۔ج۳ص۹) ظفیر
( ۲) من سمی مہر اعشر فما زاد فعلیہ المسمی ( ہدایہ ج۲ ص ۳۰۲) افادان المہر وجب بنفس العقد ( رد المحتار باب المہر ج ۲ ص ۴۵۴۔ط۔س۔ج۳ص۲- ۱) ظفیر
(۳) وصح حطہا لکلہ او بعضہ عنہ قبل اولا ( الدرالمختار علی ہامش رد المحتار ج ۲ ص ۳۲۴۔ط۔س۔ج۳ص۱۱۳) ونصابہا بغیر ہا من الحقو سواء کان الحق مالا او غیرہ کنکاح و طلاق الخ رجلان او رجل وامراتان( الدرالمختار کتاب الشہادات ج ۲ ص ۹۱۔ط۔س۔ج۵ص۴۶۵) ظفیر
( ۴) سورۃ البقرۃ : ۱۲ ظفیر
( ۵) الدرالمختار علی ہامش رد المحتار ج ۲ ص ۴۵۶۔ط۔س۔ج۳ص۱۰۴ ‘ ظفیر